66

پاکستان ایران جوہری معاہدے سے متعلق تہران کے اصولی موقف کی حمایت کرتا ہے

ایران :ہم جوہری معاہدے کے معاملے پر تہران کے ساتھ ہیں: پاکستان
پاکستان کے وزیرِ خارجہ شاہ محمودقریشی نے کہا کہ یہ بات اس لیے بھی اہم ہے کہ جوہری توانائی کا عالمی ادارہ ‘آئی اے ای اے’ متعدد بارے اس بات کی تصدیق کر چکا ہے کہ ایران سختی سے سمجھوتے پر کاربند ہے۔
اسلام آباد :پاکستان کے وزیرِ خار جہ شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ پاکستان ایران جوہری معاہدے سے متعلق تہران کے اصولی موقف کی حمایت کرتا ہے اور وہ توقع کرتے ہیں کہ دیگر بھی اس سمجھوتے پر عمل کریں گے۔
پاکستان کے دفترِ خارجہ نے ایرانی وزیرِ خارجہ جواد ظریف اور ان کے پاکستانی ہم منصب شاہ محمود قریشی کے درمیان اسلام آباد میں ہونے والے بات چیت کے بعد جاری بیان میں کہی ہے۔
وزیرِ خارجہ نے کہا کہ ان کا ملک اس معاملے پر اپنے پڑوسی ایران کے ساتھ کھڑا ہے۔
دفترِ خارجہ کے مطابق پاکستان اور ایرانی وزرائے خارجہ کے درمیان وفود کی سطح پر ہونے والی بات چیت میں ”دونوں ملکوں نے مختلف شعبوں میں تعلقات کو فروغ دینے کی اہمیت پر بات کی جب کہ علاقائی اور عالمی معاملات کے بارے میں بھی تفصیل سے گفتگو ہوئی۔
دونوں رہنماوءں نے افغانستان کی صورتِ حال اور امریکہ کی طرف سے یک طرفہ طور پر ایران جوہری معاہدے سے الگ ہونے کے معاملے پر گفتگو کی۔
پاکستانی دفترِ خارجہ نے مزید بتایا ہے کہ اسلام آباد اور تہران نے باہمی سیاسی مشاورت اور مشترکہ اقتصادی کمیشن سے متعلق جلد اجلاس بلانے پر اتفاق کیا ہے
جب کہ پاک ایران بارڈر کی سکیورٹی بہتر کرنے کے دونوں ملکوں کے طرف سے کیے گئے اقدامات پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے اس بارے میں مشاورت جاری رکھنے پر اتفاق کیا ہے۔
ایران کے وزیرِ خارجہ جواد ظریف ایک اعلیٰ سطحی وفد کے ہمراہ جمعرات کو اسلام آباد پہنچے تھے۔
ایران کے وزیرِ خارجہ نے جمعے کا پاکستانی فوج کے سربراہ جنرل قمر جاوید باجوہ سے بھی ملاقات کی۔
پاکستان فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کی طرف سے جاری ہونے والے بیان کے مطابق ملاقات میں جواد ظریف اور جنرل باجوہ نے علاقائی سلامتی کی صورت حال او ر باہمی دلچسپی کے امور پر تبادلہ خیال کیا۔
اس موقع پر جنرل باجوہ نے ایرانی وزیرِ خارجہ کو آگاہ کیا کہ پاکستان خطے کے امن و استحکام کے لیے کوششیں جاری رکھے ہوئے ہے۔
رواں سال جولائی کے انتخابات کے بعد قائم ہونے والی نئی حکومت کے قیام کے بعد کسی غیر ملکی وزیرِ خارجہ کا اسلام آباد کا یہ پہلا دورہ تھا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں